Ask Ghamidi

A Community Driven Discussion Portal
To Ask, Answer, Share And Learn

Forums Forums Islamic Sharia وراثت

Tagged: 

  • وراثت

    Posted by Muhammad Awais Saqib on October 16, 2020 at 1:17 pm

    پہلا سوال یہ ہے کہ اگر ایک بھائی(غلام فرید) اپنے دوسرے بھائی(غلام شبیر) کو (جو بے اولاد ہے) اپنا بچہ دے اور پیدائش نامے پر ولدیت کے خانے میں نام بھی اپنے بھائی کا ہی درج کرواۓ… اب غلام شبیر کی جائداد کیسے منتقل ہوگی… ان کا صرف یہ ایک ہی بچہ ہے اور دو بیویاں ہیں…غلام شبیر اب فی الوقت اپنے اس منہ بولے بیٹے اور بیوی سے ناراض ہیں جو نادرا کے شجرہ میں ان کے اہل و عیال ہیں… اور ماننے کی صورت بھی مستقبل قریب میں نظر نہیں آ رہی…

    اور غلام فرید کے 2 بیٹے ایک بیٹی اور ایک بیوی ہے… یہ سارا معاملہ پاکستانی قانون کو مد نظر رکھ مشورہ دیں کیسے حل ہو گا… حل اس طرح کرنا ہے کہ شریعت کے قریب ترین منشاء کو پا لیں اس میں فوقیت شریعت کے قانون دیں…

    Umer replied 3 years, 4 months ago 2 Members · 1 Reply
  • 1 Reply
  • وراثت

    Umer updated 3 years, 4 months ago 2 Members · 1 Reply
  • Umer

    Moderator October 21, 2020 at 3:51 pm

    It’s better to consult a lawyer to understand Inheritance distribution in accordance with Pakistani Law.

    As far as Islamic Sharia regarding adopted son is concerned, following points need to be kept in mind while deciding whether he has a share in inheritance or not:

    Discussion 30610 • Reply 30632

You must be logged in to reply.
Login | Register