Ask Ghamidi

A Community Driven Discussion Portal
To Ask, Answer, Share And Learn

Forums Forums Islam and Family Divorce Given To Intimidate The Wife Only

Tagged: ,

  • Divorce Given To Intimidate The Wife Only

    Posted by Saira Bano on November 6, 2021 at 1:02 pm

    اگر شوہر کو طلاق دینے کا طریقہ پتا نا ہو، وہ سمجھتا ہو کہ 3 ماہ میں طلاق مکمل ہوتی لیکن محض بیوی کو ڈرانے کے لیے وہ انجانے

    میں کئ بار ایک ایک کر کے طلاق دے چکا ہو اور چند دن بعد ہی رجوع کر لیتا ہو، اب کسی نے کہا کہ ایسے تو طلاق ہو گئ، شوہرکا کہنا کہ وہ نہیں دینا چاہتا تھا، وہ بس ڈرانے کے لیے یہ کرتا رہا. اور اس کو تو طریقہ بھی معلوم نہیں تھا، شادی کو 16 برس گزر ہو گیے اور اس عرصے میں کچھ بار لکھ کر اور کچھ بار ویسے ہی زبانی ایک طلاق کا کہا. اپ سے رہنمائ درکار ہے، ایک کا گواہ موجود ہے، اور ایک ابھی بھی میسیج میں موجود ہے. باقی ضایع کر دیں. اگر اس کا کوی کفارہ ہے تو وہ بھی بتا دیں. 3 بچے ہیں، ان کے لیے بہت مشکل ہو جائے گا. جزاک اللہ

    Saira Bano replied 2 years, 8 months ago 4 Members · 7 Replies
  • 7 Replies
  • Divorce Given To Intimidate The Wife Only

    Saira Bano updated 2 years, 8 months ago 4 Members · 7 Replies
  • Raja Faisal

    Member November 6, 2021 at 1:59 pm

    عدت کے اندر جتنی بھی طلاقیں دے وہ موثر نہیں ہوتی اور اسے رجوع کا حق بھی ہے لیکن عدت کے بعد دوبارہ طلاق دے پھر بھی اسے رجوع کا حق ہے اگر وہ رجوع کرنے کے بعد تیسری دفعہ طلاق دے گا تو بیوی متعلقہ ہو جائے گی اب بیوی اس پر جائز نہیں

    اسمیں کچھ شرائط ہیں جب وہ طلاق دیتا تھا کیا بیوی حیض کی حالت میں ہوتی تھی یا وہ ہمبستری کرنے کے بعد طلاق دیتا تھا؟ اگر حیض میں ہوتی تھی یا ہم بستری کرنے کے بعد طلاق دیتا تھا تو ایسی حالت میں طلاق واقع نہیں ہوتی

  • Saira Bano

    Member November 6, 2021 at 2:14 pm

    مجھے اس کا جواب غامدی صاحب کی طرف سے چاہیے باقیوں سے نہیں اس لیے باقی تبصرہ کرنے سے پرہیز کریں.

  • Umer

    Moderator November 7, 2021 at 2:04 am

    To get an answer directly from Ghamidi Sahab, please register for the next AG live event at the following link:

    Discussion 59351

    Ghamidi Sahab has reiterated on many occasions that Talaq is only effective when given with complete intention and complete control, and in case a person later on admits to the fact that it was never his intention to give divorce, then such a divorce will not be considered effective. However, a husband responsible for such deed, should ask forgiveness from Allah and should impose some fine on himself and if the matter reaches the court, then such a husband should be reprimanded by the court. Dr. Irfan Sahab (@Irfan76 ) can also comment on the matter.

    For comments of Ghamidi Sahab, please refer to the following link:

    Procedure of giving Tallaq as per Quran: refer to Part-2 of the following link from 00:07 to 04:55

    Tallaq given in Anger or as a Joke: refer to Part-3 of the following link from 00:51 to 3:16

    What if a Husband doesn’t stop himself from giving Tallaq in Anger or as a Joke: refer to Part-4 of following link from 00:10 to 1:04

    ilm-o-Hikmat 17-01-2016

    • Saira Bano

      Member November 8, 2021 at 2:19 am

      JazakAllah brother

  • Umer

    Moderator November 7, 2021 at 2:07 am

    Please also refer to the following response by Hassan ilyas Sahab:

    Discussion 37700 • Reply 38130

  • Dr. Irfan Shahzad

    Scholar November 8, 2021 at 1:59 am

    سب سے پہلے شوہر سے پوچھا جائے گا کہ اس کا کیا ارادہ تھا۔ اگر عدالت یا ثالث مرد کے بیان پر مطمین ہو جاتا ہے کہ اس کا طلاق دینے کا ارادہ نہ تھا یا وہ لا علم تھا تو طلاق واقع نہ ہونے کا فیصلہ دیا جا سکتا ہے۔ تاہم، اس سنجیدہ معاملے کو کھیل بنا لینا قابل مذمت ہے۔

    • Saira Bano

      Member November 8, 2021 at 2:26 am

      جزاک اللہ، بالکل ٹھیک کہا اپ نے ،میرے بس میں ہو تو میں سزا تجویز کرنے کا بیوی سے کہوں، کیوں کہ طلاق کا نقصان بچوں اور بیوی کو ہوتا، اور تکلیف ساری بیوی کے لیے جو تماشا بن جاتی، براہ مہربانی میرا سلام اور دعا غامدی صاحب کو ضرور پہنچائے جو اس اندھیرے میں روشی کی وجہ بنتے ہیں.

You must be logged in to reply.
Login | Register