Ask Ghamidi

A Community Driven Discussion Portal
To Ask, Answer, Share And Learn

Forums Forums General Discussions Ghamidi Sahab Source Of Income

  • Ghamidi Sahab Source Of Income

    Posted by Abu on August 6, 2022 at 6:16 am

    میرا سوال یہ ہے کہ غامدی صاحب پاکستان ، ملائیشیا اور امریکا میں رہتے ہیں ، سفر بھی کرتے ہیں ۔ انکی آمدن کا ذریعہ کیا ہے ؟

    Faisal Haroon replied 1 week, 2 days ago 2 Members · 3 Replies
  • 3 Replies
  • Ghamidi Sahab Source Of Income

    Faisal Haroon updated 1 week, 2 days ago 2 Members · 3 Replies
  • Faisal Haroon

    Moderator September 20, 2022 at 10:01 am

    برائے مہربانی اپنے سوال کا جواب حسن الیاس صاحب کی درج ذیل آڈیو میں سنیں۔

  • Faisal Haroon

    Moderator September 25, 2022 at 1:45 am

    غامدی نے عملی زندگی کا آغاز کیا تو تعلیم و تدریس کے شعبے کو اختیار کیا۔ آپ نے سول سروسز اکیڈمی لاہورمیں بطور مدرس شمولیت اختیار کی جہاں وہ اپنی خدمات کی تنخواہ وصول کیا کرتے تھے۔ پھر جب آپ نے علم و تحقیق کے لیے خود کو وقف کر دیا تو لاہور کی ایک کاروباری شخصیت، آپ کے دوست، جناب شیخ افضال نے آپ کی معاشی ذمہ داری اٹھائے رکھی۔ اس کا تذکرہ آپ نے اپنی کتاب، “میزان” کے آخر میں درج کیا ہے۔

    اب جب کہ آپ امریکہ منتقل ہو چکے ہیں تو امریکہ میں ادارہ المورد (غامدی سنٹر آف اسلامک لرننگ، GCIL) آپ کی تعلیمی اور تدریسی خدمات کے عوض آپ کو معاوضہ ادا کرتا ہے۔

    ٹی وی چینلز جوآپ کے ساتھ معاہدہ کر لیتے ہیں وہ بھی آپ کو آپ کے وقت کا معاوضہ ادا کرتے ہیں۔ دنیا نیوز کے ساتھ آپ کے ہفتہ وار پروگرام کا معاہدہ اسی نوعیت کا ہے۔

    اس کے علاوہ آپ کو آپ کی کتابوں کی فروخت سے ہونے والی آمدنی سے رائلٹی بھی ملتی ہے۔

  • Faisal Haroon

    Moderator September 25, 2022 at 1:50 am

    Ghamidi sahab started his professional career as a teacher. He joined Civil Services Academy Lahore where he received remuneration for his services.

    When he decided to dedicate all his time to research and knowledge of Deen, an industrialist of Lahore, his friend Mr. Sheikh Afzaal graciously bore his financial responsibility. Ghamidi sahab mentioned his contribution at the end of his book Meezan.

    Now he is in the USA, and here Al-Mawrid U.S. / Ghamdidi Center of Islamic Learning pays him for his services of research and teaching.

    Also TV channels pay him for his time when they have a contract with him. Currently he has a contract with Dunya News for a weekly program on their channel.

    Lastly, he receives royalties for the books that he has written.

The discussion "Ghamidi Sahab Source Of Income" is closed to new replies.

Start of Discussion
0 of 0 replies June 2018
Now