Ask Ghamidi

A Community Driven Discussion Portal
To Ask, Answer, Share And Learn

Forums Forums Epistemology and Philosophy Claims About Religion Being A Human Invention

Tagged: ,

  • Claims About Religion Being A Human Invention

    Posted by Muhammad Talha on August 16, 2022 at 3:16 pm

    If we see closely, religion seems nothing more than human justifications for uncertainties around (because that helps feel more safe and bounds society together).

    Fear of death? Develop the concept of after life.

    Then justify that because of the ‘innate desire for justice’.

    Cant deal with the absurdities of the universe? Tie every meaningless suffering with ‘Test’.

    How to know if religion is really the word of God?

    Faisal Haroon replied 1 year, 6 months ago 5 Members · 21 Replies
  • 21 Replies
  • Claims About Religion Being A Human Invention

  • Zia Iqbal

    Member August 16, 2022 at 3:29 pm

    If the traditional explainations could answer these questions, then we would have a lot more intellectually siding with the traditional worldview of the religion, but perhaps that points to the fact that our current understanding of the religion is lacking, because it is not anchored in the understanding from the Quran, instead our current worldview as offered by the various sects of ISlam are based on tradations which have to rely on collection of Hadith to prove their point of view. Perhaps we need to look at the Quran with Virgin Eyes and then we may find the answers to all these questions. Have you ever thought what does the verse mean that says that “we made them in to Monkeys and Pigs” ? Once you are able to explain these, perhaps you will have your answers to “why there is suffering in the world”.

  • Kausar Mehmood

    Member August 16, 2022 at 5:06 pm

    Some of these questions were answered during Zavia e Ghamidi series. It’s worth watching.

    • Muhammad Talha

      Member August 17, 2022 at 10:07 am

      Can you please provide the time stamps if possible, I have seen the program but don’t remember now where this discussion took place. Ghamidi Sb is of the view that we should take the view of the Quran and then we will reach the right result but if someone takes another perspective they get the wrong one.

  • Faisal Haroon

    Moderator August 17, 2022 at 9:57 am

    Before one criticizes an idea or a concept, they should first understand it sufficiently in order to criticize it in any productive manner. I think that the stated criticism on religion is made without any understanding of the claim of religion at all.

    In the Quran God claims that He gave His own awareness to the very first human beings. It further claims that God kept on reminding people by sending prophets and messengers because people would gradually deviate from the truth and start to disagree with one another.

    As far back as we have any documented history of the mankind, it’s evident that the concept of a creator has not only always been present but also prevalent. Of course we find many different concepts about God in history, and there have even been periods where polytheism was widespread, however these facts can be reconciled with people’s own baseless inventions.

    The criticism that humans invented the concept of God and thereby other claims of religion is therefore absolutely unfounded. Until a time that someone can conclusively show that the humanity began without any knowledge about God, the claim of religion which stands on very firm grounds can’t be refuted through any irresponsible criticism.

    • Muhammad Talha

      Member August 17, 2022 at 10:05 am

      Why do we need to study the claims of Quran in its own light? They should be judged against objective parameters and not against a criteria that Quran defines for itself. What Quran claims should be tested outside and not inside because with this logic if JK Rowling comes up with a new concept inside the Harry Pitter world, that would be appropriate inside the Harry Potter world.

      Why should I prioritize the claim of Quran over my own rationality that these concepts have been formed out of fear and uncertainty. This demands no faith on my side and sits fine with the rationality but on the other hand, considering there is an after life and that all the absurd sufferings of this world are a test is based pre dominantly on faith.

    • Faisal Haroon

      Moderator August 17, 2022 at 10:17 am

      If one wants to criticize any claim they must criticize it as it is found in its sources, not just their own speculations. An argument from your own rationality also must have some basis otherwise it’s just a conjecture.

    • Waleed Ahmad

      Member August 17, 2022 at 11:38 am

      فیصل بھائی قرآن ایک کتاب ہے جس میں کئی دعوے ہیں لیکن میرا سوال یہ ہے کہ قرآن میں جتنے بھی دعوے ہیں اُن سارے دعووں کو مکمل طور پر معلوم کرنے میں کتنا وقت لگ سکتا ہے؟ میں وقت کا اس لیے پوچھ رہا ہوں کیونکہ اگر یہ معلوم کرنا ہو کہ کوئی دعویٰ سچا ہے یا نہیں تو اُس دعوے کو مکمل طور پر جاننا ہوتا ہے کہ وہ دعویٰ ہے کیا؟ تو اگر قرآن کے سارے دعوے انسانی زندگی میں مکمل طور پر معلوم نہیں ہو سکتے تو اِن سارے دعووں کے درست ہونے یا غلط ہونے کا پتہ کیسے چلے گا؟ اور دوسرا یہ کہ اگر قلیل عرصے میں یا 70- 80 سال کی عمر میں قرآن کے سارے دعوے مکمل طور معلوم نہیں ہو سکتے تو آپ یہ دعویٰ کیوں کرتے ہیں کہ قرآن مکمل طور پر درست کتاب ہے؟

    • Kausar Mehmood

      Member August 17, 2022 at 10:34 am

      We should first understand the sources of knowledge, which are three as Ghamidi Sahib says. 1. Observation and experiment 2. inference and 3. Established history.

      Quran initially has to use these three sources to establish itself. Once that has been done then it becomes the 4th source.

      The rational thing is to look at the content and then ask this question has anyone ever in the history of human kind produced something like that. You have to look at it from all angles, literary, scientific details, things that we as humans could not have known1400 years ago and also any progression in the style, content etc over 23 year period. Once we have analyzed it from all angles then you will be able to establish whether it’s human work or not. If not then it must be from somewhere else. As we say out of this world.

      When that is established then we can say we now have another source of knowledge.

    • Waleed Ahmad

      Member August 17, 2022 at 12:11 pm

      Do you Claim that it is 100% not possible by using intellect or Science to find any mistake or fault in the Content or claims of Quran? If you Claim that then can you prove it through rational evidence and Proofs? But if you say that you don’t know if there is any fault or mistake in the content or claims of Quran then on what bases some people claim that Quran is 100% Correct and perfect Book?

  • Faisal Haroon

    Moderator August 17, 2022 at 12:16 pm

    @Khattak

    قرآن میں جو دعوے ماضی کے بارے میں ہیں ان کی بہت اچھی طرح تصدیق کی جا سکتی ہے۔ مستقبل کے بارے میں دعوے بعد کی زندگی سے متعلق ہیں لہذا اس زندگی کے دوران ان کی تصدیق کرنا ممکن نہیں ہے۔

    تاہم، اس سے ہمارے لیے کوئی پریشانی نہیں ہونی چاہیے کیونکہ بحیثیت انسان ہم اسی طرح کام کرتے ہیں۔ ہماری زندگی کا کوئی بھی فیصلہ، نتائج کی شدت سے قطع نظر، کبھی بھی یقین پر مبنی نہیں ہوتا۔ اس کے برعکس، ہمارے تمام فیصلے ہمیشہ ماضی کے اعداد و شمار پر ایمان اور اعتماد کی معقول سطح پر مبنی ہوتے ہیں۔ یہ ہمارے تمام ذاتی فیصلوں کے ساتھ ساتھ ہر سطح پر اجتماعی فیصلوں پر بھی صادق آتا ہے۔ تو پھر خدا کے بارے میں ہمارے ضرورت سے زیادہ اور وقت سے پہلے تصدیق کے مطالبے کی کیا وجہ ہے؟

    • Waleed Ahmad

      Member August 17, 2022 at 12:37 pm

      فیصل بھائی میرا خیال ہے آپ نے اِس بحث میں اوپر لکھے گئے میرے دونوں بیانات کو غور سے نہیں پڑھا کیونکہ آپکے اس بیان میں میرے سوالات کا جوابات موجود نہیں اور آپ کو میرے اوپر لکھے گئے بیانات میں لفظ “مکمل” پر غور کرنا چاہیے۔ باقی آپکے اس بیان پر بھی میرے ذہن میں کئی سوالات اُٹھ رہے ہیں لیکن میں چاہتا ہوں کہ پہلے میرے تمام سوالات پر نتیجہ خیز بات کرنے کی کوشش کی جائے۔

    • Kausar Mehmood

      Member August 17, 2022 at 12:55 pm

      @Khattak @Talha123 Brothers, My recommendations to you both is to watch this whole series. https://www.youtube.com/playlist?list=PLBlLCVQiApQ1n_jk9y_rAYUJ2mn5T3jd9

      It goes in a specific order like how we gain knowledge. How do we refute things that were once considered scientific facts once? etc etc. I believe it would answer your questions. There are only 14 episodes and on an average 20 minutes per episode.

    • Faisal Haroon

      Moderator August 17, 2022 at 1:19 pm

      @Khattak

      بھائی میں نے اس بحث کے تناظر میں آپ کے پچھلے جواب میں تشویش کا جواب دینے کی کوشش کی ہے۔ اگر میں آپ کی تشویش کو صحیح طور پر نہیں سمجھ پایا ہوں تو براہ کرم کچھ وضاحت فراہم کریں۔ اگر آپ کی تشویش اس بحث کے تناظر میں نہیں ہے تو براہ کرم ایک نئی پوسٹ بنائیں۔

    • Waleed Ahmad

      Member August 17, 2022 at 2:25 pm

      قرآن میں کئی دعوے ہیں مثلاً خدا رحمان اور رحیم ہے، خدا ہر چیز پر قادر ہے، قرآن خدا کی طرف سے ہے، محمد نامی شخص سے خدا نے کلام کیا ،قرآن میں کوئی تضاد نہیں ہے، ہمیشہ کی جہنم موجود ہے یا ہوگی وغیرہ وغیرہ لیکن میرا سوال یہ ہے کہ قرآن میں جتنے بھی دعوے ہیں چاہے وہ انسان کی تخلیق سے پہلے کے بارے میں ہوں یا بعد کے بارے میں ان سارے دعووں کو مکمل طور پر معلوم کرنے میں کتنا وقت لگتا ہے؟ میرے خیال میں وقت کا پتہ کرنا ضروری ہے کیونکہ جب کوئی دعویٰ دیکھنا ہوتا ہے کہ وہ دعویٰ سچا اور درست ہے یا نہیں تو اُس دعوے کو مکمل طور پر معلوم کرنا ہوتا ہے کہ دعویٰ ہے کیا اور کس چیز کے بارے میں ہے؟ تو اگر قرآن کے سارے دعوے اس دنیا کی انسانی زندگی میں مکمل طور پر معلوم نہیں ہو سکتے تو اِن سارے دعووں کے درست یا غلط ہونے کا پتہ کیسے چلے گا؟ اور قرآن میں جتنے بھی دعوے کیے گئے ہیں اگر اُن سارے دعووں کو مکمل طور پر معلوم کرنے کے لیے کم سے کم ایک ہزار سال بھی ناکافی ہیں تو کچھ لوگ یہ دعویٰ کس بنیاد پر کرتے ہیں کہ قرآن مکمل سو فیصد درست کتاب ہے؟

  • Faisal Haroon

    Moderator August 17, 2022 at 4:28 pm

    میرے بھائی سب سے پہلے میں آپ کو یاد دلانا چاہوں گا کہ میں صرف اس بحث کے تناظر میں آپ کے تبصرے کا جواب دے سکوں گا جو اس تنقید کے حوالے سے ہے کہ مذہب ایک انسانی تصور ہے۔

    مجھے لگتا ہے کہ آپ ‘دعوے’ کو ‘پیش گوئی’ کے ساتھ ملا رہے ہیں۔ آپ کے بیان کردہ دعووں کی تمام مثالیں ایک معقول وقت میں علم اور عقل کی بنیاد پر ثابت ہو سکتی ہیں۔

    پیشین گوئیوں کی تصدیق کے لیے وقت درکار ہوتا ہے۔ لیکن قرآن پیشین گوئیوں کی کوئی انسانی کتاب نہیں ہے کہ قرآن کے آسمانی ماخذ کو قبول کرنے سے پہلے ہر پیشین گوئی کی تصدیق کی جائے۔ اس کے بجائے، قرآن ان واقعات کا نتیجہ ہے جو تاریخ کے قابل تصدیق ذرائع سے قائم ہیں۔ قرآن کے درست ہونے کا دعویٰ نہ صرف اس کے مواد میں موجود واقعات کی ماضی کی پیشین گوئیوں پر مبنی ہے بلکہ اس کے ماخذ کی ناقابل تردید نوعیت کی وجہ سے ہے۔

    • Waleed Ahmad

      Member August 17, 2022 at 11:48 pm

      فیصل بھائی میرے خیال میں دعویٰ ماضی کے بارے میں بھی ہو سکتا ہے حال کے بارے میں بھی اور مستقبل کے بارے میں بھی اور مستقبل کے بارے میں دعوے کو پیشن گوئی بھی کہا جاسکتا ہے جیسے کہ اگر کوئی یہ کہے کہ (کل کو 3:45 پر بارش شروع ہوگی) اور کہے کہ میری بات مکمل درست ہے تو یہ ایک دعویٰ ہوگیا۔ اسکے علاوہ فیصل بھائی آپ نے اس بات کا جواب ہی نہیں دیا کہ قرآن میں جتنے بھی دعوے ہیں چاہے وہ انسان کی تخلیق سے پہلے کے بارے میں ہوں یا بعد کے بارے میں ان سارے دعووں کو مکمل طور پر معلوم کرنے میں کتنا وقت لگتا ہے؟ میرے خیال میں وقت کا پتہ کرنا ضروری ہے کیونکہ جب کوئی دعویٰ دیکھنا ہوتا ہے کہ وہ دعویٰ سچا اور درست ہے یا نہیں تو اُس دعوے کو مکمل طور پر معلوم کرنا ہوتا ہے کہ دعویٰ ہے کیا اور کس چیز کے بارے میں ہے؟ تو اگر قرآن کے سارے دعوے اس دنیا کی انسانی زندگی میں مکمل طور پر معلوم نہیں ہو سکتے تو اِن سارے دعووں کے درست یا غلط ہونے کا پتہ کیسے چلے گا؟ اور قرآن میں جتنے بھی دعوے کیے گئے ہیں اگر اُن سارے دعووں کو مکمل طور پر معلوم کرنے کے لیے کم سے کم ایک ہزار سال بھی ناکافی ہیں تو کچھ لوگ یہ دعویٰ کس بنیاد پر کرتے ہیں کہ قرآن مکمل سو فیصد درست کتاب ہے؟

      اور میں یہ کہنا چاہتا ہوں کہ جب کسی انسان کو یہ معلوم ہی نہیں کہ قرآن نے اس دنیا کی تخلیق سے پہلے اور بعد (ماضی،مستقبل دونوں) کے بارے میں جو بھی دعوے کیے ہیں وہ مکمل طور پر ہیں کیا اور کیا وہ سارے دعوے درست ہیں یا نہیں؟ تو میرے خیال میں کسی انسان کا یہ دعویٰ تو درست ثابت ہی نہیں ہوا کہ قرآن کے دعوے اور قرآن کا مواد مکمل سو فیصد درست ہے۔ جس کتاب کا مکمل درست ہونا اور خرابی سے پاک ہونا ثابت ہی نہ ہو تو اُس کتاب کو کیوں کچھ لوگ خدا کی کتاب کہتے ہیں؟

  • Faisal Haroon

    Moderator August 18, 2022 at 9:41 am

    یہ شرط اصولی طور پر بالکل غلط ہے کہ جب تک تمام دعوے مشاہدے سے ثابت نہ ہو جائیں تب تک بات قابل قبول نہیں۔ جب آپ کسی ڈاکٹر کے پاس جاتے ہیں تو آپ اس سے پہلے مشاہدے کے ذریعے اس کے دعوے کو ثابت کرنے کو نہیں کہتے کہ وہ آپ کے سر درد کا علاج کر سکتا ہے۔ اس کے بجائے آپ ان باتوں پر بھروسہ کرتے ہیں جو معقول طور پر ثابت ہو سکتے ہیں – مثال کے طور پر آپ اس کی ڈگری یا سرٹیفکیٹ دیکھتے ہیں اور آپ دوسرے مریضوں کی گواہی پر انحصار کرتے ہیں۔

    آپ کی الجھن بالکل اسی مسئلے کی وجہ سے ہے جس کا میں نے اپنے پہلے جواب میں اشارہ کیا تھا۔ آپ سمجھتے ہیں کہ قبولیت کا انحصار کسی چیز کو بغیر کسی شک کے ثابت کرنے پر ہے۔ جبکہ جیسا کہ میں نے آپ کو پہلے بھی بتایا تھا، ایسا نہیں ہے۔

    • Waleed Ahmad

      Member August 18, 2022 at 11:37 am

      فیصل بھائی بات یہ ہے کہ میں نے صرف مشاہدے کی بات نہیں کی بلکہ میں عقل و شعور کی بھی بات کررہا ہوں اور آپ کے بیان میں میرے سوالات کا جواب اب بھی موجود نہیں اور آپ نے جو ڈاکٹر والی بات کی وہ میرے سوال کا جواب بلکل نہیں ہے ۔ میرے خیال میں شاید دس سال کا بچہ بھی یہ بات باآسانی سمجھ جائے کہ جب تک کسی شخص کے بارے میں یہ ثابت نہ ہو کہ وہ کسی مخصوص بیماری کا علاج کر سکتا ہے تب تک وہ اُس بیماری کا علاج کرنے کے قابل نہیں کہلاتا چاہے وہ ہزار مرتبہ یہ دعویٰ کرے کہ میں اُس بیماری کا علاج کر سکتا ہوں۔

  • Faisal Haroon

    Moderator August 18, 2022 at 11:56 am

    بھائی آپ کو اپنے سوال کا جواب نہیں مل رہا کیونکہ آپ کا سوال ایک غلط مفروضے پر مبنی ہے۔ جیسا کہ میں نے پہلے اشارہ کیا، کسی بھی فکری دلائل کے ساتھ ساتھ ماضی کی پیشین گوئیوں کی بھی معقول وقت میں تصدیق کی جا سکتی ہے۔ وقت کی کمی صرف اس وقت تشویش کا باعث ہوتی ہے جب آپ کو مستقبل کے کسی واقعہ کی پیشین گوئی کے براہ راست مشاہدے کی ضرورت ہوتی ہے۔

    • Waleed Ahmad

      Member August 18, 2022 at 12:12 pm

      بھائی میں نے تو کوئی مفروضہ کیا ہی نہیں میں تو ان لوگوں سے سوالات پوچھ رہا ہوں جو یہ کہتے ہیں کہ قرآن مکمل درست کتاب ہے ، قرآن میں کئی دعوے اور بیانات ہیں اور قرآن کا ہر دعویٰ اور بیان مکمل درست ہے۔

  • Faisal Haroon

    Moderator August 18, 2022 at 12:36 pm

    اگر آپ نے کوئی مفروضہ قائم نہیں کیا ہے تو مجھے نہیں معلوم کہ وقت کی کمی آپ کے سوال میں اس قدر مرکزی تشویش کیوں رکھتی ہے۔ قرآن کو اپنے تاریخی ماخذ میں ناقابل تردید شواہد کے ساتھ ساتھ ان مشاہداتی، فکری، تاریخی اور حالاتی شواہد کی وجہ سے سچا سمجھا جاتا ہے جو اس کے مواد میں موجود ہیں اور جن کی علم و دانش کی روشنی میں معقول طور پر تصدیق کی جا سکتی ہے۔ جیسا کہ میں نے اپنے پہلے ہی جواب میں آپ کو بتایا ہے کہ ہم کسی بھی چیز کے بارے میں سو فیصد یقین حاصل نہیں کر سکتے۔ اگر کچھ لوگ قرآن کے حوالے سے یہ دعویٰ کرتے ہیں تو آپ ان سے اپنا سوال پوچھ سکتے ہیں۔

You must be logged in to reply.
Login | Register