Ask Ghamidi

A Community Driven Discussion Portal
To Ask, Answer, Share And Learn

Forums Forums Sources of Islam Imam And Moazzan In Mosque With Salary

Tagged: ,

  • Imam And Moazzan In Mosque With Salary

    Mohammad Siddiqui updated 2 weeks, 2 days ago 2 Members · 6 Replies
  • Dr. Irfan Shahzad

    Scholar February 5, 2024 at 11:01 pm

    Jaiz hai. ye dosron kay lie ki jati hai is liey service ka muwazah lia ja sakta hai.

    • Mohammad Siddiqui

      Member February 6, 2024 at 10:20 am

      ek hadees hai jisme aap s.a.w. ne kaha ki masjid me wo muazzin rakho jo bila ujrat azaan de, jab azaan ki ujrat nahi le sakte to imaamat ki ujrat kaise le sakte hai, halaanki azaan bhi doosro ke liye di jaati hai.

  • Dr. Irfan Shahzad

    Scholar February 7, 2024 at 12:49 am

    ایسی کوئی حدیث ہے تو حوالہ پیش کیجیے تاکہ دیکھا جا سکے کہ اس کی سند کی جانچ کی جا سکے۔

    جہاں تک دین کا تعلق ہے تو اس نے جہاد پر جانے والے مجاہدین کو بھی مال غنیمت میں حصہ دار بنایا ہے۔ اس سے اندازہ کیا جا سکتا ہے کہ دین میں دینی خدمات کو کس طرح دیکھا جاتا ہے۔

  • Mohammad Siddiqui

    Member February 7, 2024 at 6:06 am

    ye ek aisa kamai ka zariya hai jisme na to sarmaya lag raha hai aur na hi mehnat aur na hi waqt

    .عن عثمان بن أبي العاص رضي الله عنه قال: يا رسول الله، اجعلني إمام قومي، قال: «أنت إمامهم، وَاقْتَدِ بأضعفهم، وَاتَّخِذْ مُؤَذِّناً لا يأخذ على أذانه أجرا».

    [صحيح] – [رواه أبو داود والنسائي وأحمد]

  • Dr. Irfan Shahzad

    Scholar February 8, 2024 at 3:51 am

    اصول یہ ہے کہ حدیث سے کسی اصول قانون یا قاعدے کا استنباط نہیں کیا جاتا۔ حدیث میں بیان کردہ بات کسی خاص سیاق و سباق میں ہوتی ہے جسے راوی عموما نقل نہیں کرتے۔ آپ ﷺ کی یہ ہدایت کسی خاص موقع پر مبنی ہے۔ کیوں کہ اصولا اس میں کوئی حرج نہیں کہ انسان اپنی خدمات کا معاوضہ پائے۔ چاہے وہ خدمت دینی ہی ہو۔ ورنہ صرف آذان ہی نہیں، کسی بھی دینی خدمت پر معاوضہ وصول کرنا ممنوع ہونا چاہیے جو کہ کوئی بھی تسلیم نہیں کرتا۔ چناں علما نے اس ممانعت کو مطلقا نہیں لیا۔

You must be logged in to reply.
Login | Register